ترکی کے نائٹ کلب میں مسلح افراد کی فائرنگ

ترکی کے نائٹ کلب میں مسلح افراد کی فائرنگ

ترک شہر استنبول میں سال نو کی تقریبات کے موقع پر ایک نائٹ کلب میں مسلح افراد نے گھس کر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں کم سے کم 39 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے۔نائٹ کلب پر حملے کے بعد پولیس نے اطراف کے علاقوں کو آپریشن کیلئے گھیر لیا۔ تاحال کوئی کامیابی حاصل نہیں ہوسکی۔ترکی کے وزیر داخلہ سلیمان صوئلو کے مطابق سال نو کے موقع پر استنبول کے نائٹ کلب میں ہونے  والے حملے میں 16 غیر ملکیوں سمیت 39 افراد ہلاک جب کہ 69 افراد زخمی ہوئے، جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا۔وزیر داخلہ کے مطابق ہلاک ہونے والے افراد میں سے 5 ترکی بھی شامل ہیں جبکہ مزید ہلاک ہونے والوں کی شناخت کا عمل جاری ہے، کچھ زخمیوں کی حالت بھی تشویش ناک ہے۔اس سے قبل حملے کے فوراْ بعد استنبول کے گورنر نے واقعے کو دہشت گردی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہلاک ہونے والوں میں ایک پولیس افسر بھی شامل ہے۔ گورنر نے نائٹ کلب پر حملہ کرنے والوں سے متعلق بتایا کہ ‘دہشت گرد حملہ کرنے والا شخص ایک تھا۔لیکن حملے سے قبل نائٹ کلب میں 700 کے قریب افراد موجود تھے جو سال نو کا جشن منارہے تھے۔ترک میڈیا کا کہنا تھا کہ مسلح افراد نے نائٹ کلب میں گھس کر اندھا دھند فائرنگ شروع کی جس کا سلسلہ تاحال جاری تھا جبکہ مسلح افراد نے کلب میں موجود لوگوں کو یرغمال بنالیا ہے،واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور ریسکیو اہلکاروں کی بڑی تعداد نے جائے وقوعہ کا رخ کیا۔مبینہ دہشت گردی کے خطرے کے پیش نظر استنبول شہر میں سیکیورٹی ہائی الرٹ تھی اور یہاں 17000 پولیس اہلکار تعینات تھے۔نائٹ کلب پر حملے کے بعد شہری محفوظ مقام کی جانب جا رہے ہیں۔خیال رہے کہ گذشتہ سال 2016 میں ترکی کے شہر استنبول اور دارالحکومت انقرہ کو متعدد مرتبہ حملوں کا نشانہ بنایا گیا جس میں کم سے کم 180 افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہوئے، ان حملوں کی ذمہ داری داعش اور کرد علحیدگی پسندوں کی جانب سے قبول کی گئی۔استنبول کے نائٹ کلب پر حملے کے بعد عالمی برادری کی جانب سے مذمت کا سلسلہ شروع ہوا، وزیر اعظم پاکستان نواز شریف نے حملے میں انسانی جانوں کے نقصان پر اظہار افسوس کرتے ہوئے حملے کی مذمت کی اور کہا کہ پاکستانی قوم ترکی کے غم میں برابر کی شریک ہے۔وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ دہشت گرد مشترکہ دشمن ہیں، دنیا کو مل کر دہشت گردی کے خلاف لڑنا ہوگا، پاکستان نے بھی دہشت گردی کے باعث بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھایا۔نیٹو کے سیکریٹری جنرل جینز اسٹال برگ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ استنبول سے 2017 کا المناک آغاز ہوچکا۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*