فوجی عدالتوں کی مدت کا آخری دن

فوجی عدالتوں کی مدت کا آخری دن

پاکستان میں فوجی عدالتوں کی دو سالہ مدت آج یعنی سنیچر کو ختم ہو رہی ہے جب کہ حکومت کی جانب سے دہشت گردی کے مقدمات سے نمٹنے کے لیے نیا قانون تیار کیا جا رہا ہے۔

خیال رہے کہ پشاور میں آرمی پبلک سکول پر حملے کے بعد انتہا پسندوں سے منسلک مقدمات سے نمٹنے کے لیے پارلیمان نے 21ویں آئینی ترامیم کرتے ہوئے فوجی عدالتیں قائم کرنے کی منظوری دی تھی۔ان عدالتوں کی توسیع کے بارے میں فی الحال کوئی امکان دکھائی نہیں دے رہا تاہم دہشت گردی کے مقدمات کے لیے ایک نیا قانون تیار کیا جا رہا ہے۔وزیراعظم کے مشیر برائے قانونی امور بیرسٹر ظفر اللہ فوجی عدالتوں کی مدت کے خاتمے سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں حال ہی میں بتایا تھا کہ اگر سیاسی جماعتیں فوجی عدالتوں میں توسیع کے لیے ساتھ نہیں دیتیں تو اگلے چند دنوں میں نئے قانون کا مسودہ پیش کر دیا جائے گا۔ جس میں ہماری عام عدالتیں ہی کام کریں گیں مگرگواہوں، پراسیکیوٹر، پولیس اور ججز کو زیادہ تحفظ فراہم کیا جائے گا تاکہ انتہاپسندی سے متعلق مقدمات کی سماعت نہ رکے۔انھوں نے کہا کہ ‘یہ نہیں کہ کسی پر چھوٹی موٹی بات پر دہشت گردی کا الزام لگ جائے۔ ہم اسے تھوڑا انسانیت کے دائرے میں لانا چاہتے ہیں کہ جو حقیقی دہشت گرد ہیں اور واقعی معاشرے کے لیے خطرہ ہیں انھیں دہشت گرد کہیں۔’

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*