محکمہ ٹرانسپورٹ سندھ کی اربوں روپے مالیت کی زمین پر قبضہ

محکمہ ٹرانسپورٹ سندھ کی اربوں روپے مالیت کی زمین پر قبضہ

کراچی: محکمہ ٹرانسپورٹ سندھ کی اربوں روپے مالیت کی زمین اور املاک پر مافیا کے قبضے کا انکشاف ہوا ہے اور اب محکمے کی جانب سے قبضہ ختم کرانے کی درخواست کی جارہی ہے۔

محکمہ ٹرانسپورٹ کی زمین پر محکمہ پولیس کے تھانے، چوکیاں، ایکسائز کے دفاتر، عدالتی دفاتر، ڈپٹی کمشنر آفس اور سابقہ ایس آر ٹی سی کے ملازمین کی رہائش اور فٹبال گراؤنڈ بنانے کا انکشاف ہوا ہے۔

محکمہ ٹرانسپورٹ سندھ نے صوبے بھر میں اپنی زمین پر قبضے ختم کرانے کے لئے فہرستیں آئی جی سندھ، ڈویژنل کمشنرز، ڈپٹی کمشنرز اور متعلقہ محکموں کو بھیج دیں۔

تحریری خط اور فہرستوں میں انکشاف ہوا ہے کہ صوبے بھر میں محکمہ ٹرانسپورٹ کی اربوں روپے کی 76 ایکڑ سے زائد قیمتی زمین، دفاتر، ڈیپوز اور دکانوں پر قبضہ ہوچکا ہے۔

کراچی میں کے ٹی سی کی ماڈل سینٹرل ورکشاپ، اورنگی نالا ڈپو، نارتھ کراچی ڈپو، لانڈھی ڈپو، سرجانی ٹرمینل، پاپوش نگر ٹرمینل پر کارپوریشن اور معاہدہ ختم ہونے کے بعد قبضہ کرلیا گیا ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*