ایف بی آئی کی دوبارہ تحقیقات کے بعد بھی ای میلز کے معاملے پر کوئی کیس نہیں بنے گا

ایف بی آئی کی دوبارہ تحقیقات کے بعد بھی ای میلز کے معاملے پر کوئی کیس نہیں بنے گا

ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار ہلیری نے امید ظاہر کی ہے کہ ایف بی آئی کی دوبارہ تحقیقات کے بعد بھی ای میلز کے معاملے پر کوئی کیس نہیں بنے گا ۔ری پبلکن صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہلیری صدر منتخب ہوئیں تو امریکا کو آئینی بحران کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ادھرمحکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ ای میلز کی تحقیقات کے معاملے پر وہ ایف بی آئی کے ساتھ تعاون کرے گا ۔ریاست اوہائیو میں انتخابی ریلی سے خطاب میں ہلیری کا کہنا تھا کہ وہ کوئی بہانہ نہیں بنارہی ،تاہم وہ پہلے بھی کہہ چکی ہیں کہ ای میل اکائونٹ کے سلسلے میں ان سے غلطی ہوئی ہے جس کا انہیں افسوس ہے ،تاہم انہیں امید ہے ایف بی آئی کے دوبارہ تحقیقات کے بعد بھی ان کے خلاف کوئی کیس نہیں بن پائے گا ۔ریاست مشی گن میں انتخابی ریلی سے خطاب میںٹرمپ نے ایک بار پھر کہا کہ ہلیری کے خلاف تحقیقات طویل عرصے تک جاری رہ سکتی ہیں، اسی لیے ہلیری صدارت کے لیے ناموزوں ہیں،وہ ملک کو ایک دلدل میں دھکیل دیں گی اور ہمارا ملک اس کا متحمل نہیں ہوسکتا ۔وائٹ ہائوس نے ایف بی آئی کی جانب سے ای میلز معاملے کی دوبارہ تحقیقات پر خاموشی اختیار کر رکھی ہے ،ترجمان جوش ارنیسٹ کا کہنا تھا کہ صدر اوباما ایف بی آئی ڈائریکٹر جیمز کومے کو ایک قانون پسند اور اچھے کردار کا حامل شخص سمجھتے ہیں ، اور وہ نہیں سمجھتے کہ جیمز کومے صدارتی انتخابات کا رخ ٹرمپ کے حق میں موڑنا چاہتے ہیں ۔سیاسی تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ ایف بی آئی کی جانب سے ای میلز کی دوبارہ تحقیقات کے اعلان نے ڈائریکٹر جیمز کومے کو مشکل سے دوچار کردیا ہے، حالانکہ جیمز کومے ایک قانون پسند افسر کے طور پر شہرت رکھتے ہیں تاہم تحقیقات کے اعلان سے ان پر الیکشن میں مداخلت جیسے الزامات بھی عائد کیے جارہے ہیں ۔ادھر لندن میں میئر صادق خان کے ہمراہ ایک تقریب سے خطاب میں سیکریٹری خارجہ جان کیری کا کہنا ہے کہ اس صدارتی الیکشن نے ان کی پیشہ ورانہ مشکلات میں اضافہ کیا ہے ۔انہوں نے صدارتی مہم کو شرمناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ بیرون ممالک میں اس سے امریکی شناخت کو مشکل سے دوچار کیا ہے ۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*