درگاہ حملے میں مرنے والوں میں بچے اور خواتین کی بڑی تعداد شامل

درگاہ حملے میں مرنے والوں میں بچے اور خواتین کی بڑی تعداد شامل

ملک دشمنوں نے بلوچستان میں امن پر ایک اور بزدلانہ وار کر دیا ، درگاہ شاہ نورانی کےاندر خودکش حملے نے 52 افراد کی جان لے لی ، جاں بحق ہونیوالوں میں خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد شامل تھی ، سو سے زائد زخمیوں کو کراچی اور حب کے ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا ۔ امن دشمنوں نے درگاہ کو بھی نہیں بخشا ۔ دہشت گردوں کی بزدلانہ کارروائی نے کئی گھروں کے چراغ گل کر دئیے ۔ درگاہ شاہ نورانی کے اندر خودکش دھماکا ہوا ، درجنوں افراد لقمہ اجل بن گئے جس میں میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے ، دہشتگردوں نے مغرب کے وقت درگاہ شاہ نورانی کے مرکزی دروازے پر اس وقت دھماکا کیا جب لوگ دھمال ڈال رہے تھے ۔ دھماکے کے بعد درگاہ میں بھگڈر مچ گئی اور قیامت صغریٰ کے مناظر دیکھے گئے ۔ دور دراز اور دشوار گزار پہاڑی علاقے کے باعث ریسکیو ادارے بروقت نہ پہنچ سکے ، زخمیوں کو کئی گھنٹے بعد ہسپتالوں میں پہنچایا جا سکا ۔ زیادہ تر زخمی کراچی اور حب کے ہسپتالوں میں منتقل کئے گئے ۔ دیگر شہروں میں بھی ایمرجنسی نافذ کی گئی ۔ دھماکے میں کسی کی گود اجڑی تو کوئی سر کا سایہ کھو بیٹھا ۔ ایک عینی شاہد نے بتایا کہ جب وہ دھمال کے قریب پہنچے تو دھماکا ہو گیا جس سے اس کی ایک آنکھ ضائع ہو گئی ۔ کمشنر قلات محمد ہاشم کا دھماکے سے متعلق کہنا تھا کہ ابتدائی تحقیقات کےمطابق دھماکا خود کش تھا ۔ دشمن آسان ہدف کو نشانہ بنا رہا ہے ، دھمال کے وقت مزار کے احاطے میں ساڑھے چار سو سے زائد زائرین موجود تھے ۔ دہشت گردوں کی ایک اور بزدلالہ کارروائی نے ہر آنکھ اشکبار کر دیا ۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*