دہشت گردوں اور پناہ دینے کا کیس ، ڈاکٹر عاصم سمیت تمام ملزمان پر فرد جرم عائد

دہشت گردوں اور پناہ دینے کا کیس ، ڈاکٹر عاصم سمیت تمام ملزمان پر فرد جرم عائد

انسداد دہشت گردی عدالت نے دہشت گردوں کے علاج اور پناہ دینے کے کیس میں ڈاکٹر عاصم سمیت تمام ملزمان پر فرد جرم عائد کر دی ، ملزمان نے صحت جرم سے انکار کر دیا ۔انسداد دہشت گردی عدالت میں دہشت گردوں کے علاج اور پناہ دینے کے کیس کی سماعت ہوئی ، عدالت میں ڈاکٹر عاصم ، انیس قائم خانی ، قادر پٹیل ، وسیم.اختر ، روف صدیقی اور دیگر موجود تھے ۔ وکلا نے سماعت ملتوی کرنے کی استدعا کی اور کہا کہ ڈاکٹرز نے ڈاکٹر عاصم کو مکمل آرام کا مشورہ دیا ہے ۔ عدالت نے تمام ملزموں پر فرد جرم عائد کر دی ۔ تمام ملزموں نے صحت جرم سے انکار کر دیا ۔ڈاکٹر عاصم نے کہا کہ جن لوگوں نے مجھ پر الزام لگایا ہے ان پر بھی فرد جرم عائد کریں ۔ عدالت نے کہا کہ آپ کے وکیل آپ کو سمجھا دیں گے ۔ ڈاکٹر عاصم بولے میں نے کوئی جرم نہیں کیا ، میں بطور ڈاکٹر چپڑاسی سمیت ہر کسی کا علاج کیا ۔ڈاکٹر عاصم نے کہا کہ میں فرد جرم پر آپ کو دفعات پڑھ کر سنا دیتا ہوں ۔ میں نے تو پولیس اور رینجرز کے سامنے اعتراف کیا ہے ۔ الزام تو حضرت یوسف علیہ اسلام پر بھی لگے تھے میں آپ کو قرآنی آیات اور حدیثیں سنا دیتا ہوں۔ مجھے 10 منٹ دیے جائیں ورنہ آپ نے مجھ پر جو سزا ٹھوکنی ہے ٹھوک دیں ۔ مجھ پر جرم تو پہلے ثابت کیا جائے ۔عدالت نے قادر پٹیل سے کہا کہ آپ نے لیاری کے دہشت گردوں کا ڈاکٹر عاصم کے ہسپتال میں علاج کرایا ہے ۔ قادر پٹیل نے جواب دیا کہ میں نے ایسا کچھ نہیں کیا۔ عدالت نے کہا کہ آپ لیاری میں رہتے تو ہیں۔ قادر پٹیل بولے وہاں تو 16 لاکھ لوگ رہتے سب کومجرم بنا دیں ۔ عدالت نے کہا کہ آپ بھول رہے ہیں جج کی رہائش بھی لیاری میں ہے ۔ بعد ازاں عدالت نے مقدمے کی سماعت 16 نومبر تک ملتوی کر دی ۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*