سانحہ کوئٹہ کے ماسٹر مائنڈ کی گرفتاری سے متعلق وزیر اعلیٰ کے بیان سے متعلق جواب نہ ملنے پر کمیشن کا اظہار برہمی

سانحہ کوئٹہ کے ماسٹر مائنڈ کی گرفتاری سے متعلق وزیر اعلیٰ کے بیان سے متعلق جواب نہ ملنے پر کمیشن کا اظہار برہمی

کوئٹہ میں سانحہ سول اسپتال کیس پر قائم تحقیقاتی کمیشن کی کارروائی کے دوران سانحہ کے ماسٹر مائنڈ کی گرفتاری سے متعلق وزیر اعلیٰ کے بیان سے متعلق جواب نہ ملنے پر کمیشن نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ،ان کے ترجمان اور آئی جی پولیس سب علیحدہ علیحدہ باتیں کررہے ہیں۔سانحہ سول اسپتال کوئٹہ کے حوالے سے قائم انکوائری کمیشن کی کارروائی سپریم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسٰی کی سربراہی میں ہوئی۔کمیشن نے سانحہ کے ماسٹر مائنڈ کی گرفتاری سے متعلق وزیر اعلیٰ کے بیان سے متعلق جواب نہ ملنے پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ،ان کا ترجمان اور آئی جی پولیس سب علیحدہ علیحدہ باتیں کررہے ہیں، بیان ،تردید اور پھر بیان سب کنفیوژن پھیلارہے ہیں، محسوس ہو رہا ہے کہ کمیشن کی کارروائی کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، کمیشن پر سیاست نہیں چلنے دیں گے۔جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے استفسار کیا کہ وزیر اعلیٰ کہاں ہیں، جب تک وہ خود نہیں بتائیں گے یہ کنفیوژن دور نہیں ہوگی۔انہوں نے کہاکہ آئی جی پولیس سے پوچھا جائے وزیر اعلیٰ کہاں ہیں، انہیں سی ایم کے موومنٹ کا پتا ہوتا ہے، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہاکہ 20 منٹ میں واضح جواب نہ آیا تو وزیر اعلیٰ کو کمیشن طلب کریں گے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*