سپریم کورٹ نے مردم شماری 2ماہ میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا

سپریم کورٹ نے مردم شماری 2ماہ میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا

سپریم کورٹ نے مردم شماری 2ماہ میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ سپریم کورٹ کے پاس وزیراعظم کو طلب کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں،7دسمبر تک حتمی تاریخ دیں، ورنہ وزیراعظم کو عدالت میں بلائیں گے۔ تحریری طورپربتائیں مردم شماری 15مارچ سے 15مئی تک ہوگی۔مردم شماری میں تاخیر سےمتعلق سپریم کورٹ کی طرف سے از خود نوٹس کی سماعت چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں 3رکنی بینچ نے کی ۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ مردم شماری سے متعلق وزیراعظم کے دستخط سے حتمی تحریری تاریخ دیں ،جمہوری نظام کا دارو مدار مردم شماری پر ہے ،مردم شماری نہ کراکر پورے ملک سے مذاق کیا جا رہا ہے،مردم شماری ہوگی تونئی حلقہ بندیاں ہوں گی۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے ہیں کہ حکومت کی نیت ٹھیک نہیں ، تمام سیاسی جماعتوں کو یہی اسٹیٹس کو ،سوٹ کرتا ہے۔ آئین کے مطابق مردم شماری نہ کرائی گئی تووزیراعظم عدالت کےکٹہرےمیں ہوںگے۔چیف جسٹس نے مزید کہا کہ آج حکومت کہہ رہی ہے فوج کے بغیر مردم شماری نہیں ہو سکتی،کل الیکشن کمیشن بھی کہے گا کہ فوج کےبغیر الیکشن نہیں ہو سکتے،لائن آف کنٹرول پر جھڑپیں چل رہی ہیں،اس طرح تواپریل میں بھی مردم شماری شروع نہیں ہو سکے گی۔جسٹس امیر ہانی مسلم نے کہا کہ وزیراعظم کو بلائیں یاپھر مردم شماری کی حتمی تاریخ دیں ، بتائیں وزیراعظم کب پیش ہوسکتے ہیں؟ تاریخ نہیں آئی تووزیراعظم وضاحت کے لیے خود سپریم کورٹ آئیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*