وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی زیر صدارت قومی مالیاتی کمیشن کا اجلاس

وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی زیر صدارت قومی مالیاتی کمیشن کا اجلاس

نویں قومی مالیاتی کمیشن کا اجلاس وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی زیر صدارت آج اسلام آباد میں منعقد ہوگا، اجلاس میں کمیشن کی ششماہی رپورٹ اور ورکنگ گروپوں کی طرف سے پیش کی جانے والی رپورٹوں کا جائزہ لیا جائیگا۔وزرات خزانہ ذرائع کے مطابق قانونی تقاضا پورا کرنے کیلئے این ایف سی کی ششماہی رپورٹ غور کرنے کے بعد پارلیمنٹ میں پیش کر دی جائےگی، اجلاس میں بلوچستان اور سندھ کے وزراء اعلی جو کہ وزراء خزانہ بھی ہیں شرکت نہیں کر سکیں گے،ان کی نمائندگی پرا ئیوٹ ممبران کریں گے۔صوبوں کے بار بار مطالبے پر اجلاس تو بلا لیا گیا ہے، لیکن اجلاس کے ایجنڈے سے صوبوں کو مطلع نہیں کیا گیا۔خیبر پختونخوا سےاین ایف سی کے پرائیوٹ ممبر پروفیسر ابراہیم کا کہنا تھا کہ ہمارے بار بار مطالبے پر اجلاس تو بلا لیا گیا لیکن ایجنڈے سے آگاہ نہیں کیا گیا۔ذرائع کے مطابق کل کے اجلاس میں صوبہ سندھ مطالبہ کرے گا کہ گیس کی طرز پر تیل کی ویل ہیڈ رائلٹی صوبوں کو دی جائے،اشیاء پر سیلز ٹیکس اور کیپٹل گین ٹیکس کی وصولی بھی صوبوں کو کرنے دی جائے اورخیبرپختونخوا کی طرح سیکیورٹی اور دہشت گردی کے حوالے سے رینجرز پر اٹھنے والے اخراجات پورے کرنے کے لئے سندھ کو بھی خصوصی گرانٹ دی جائے۔پنجاب کا موقف بھی سندھ سے ہم آہنگ ہیںجبکہ بلوچستان کا مطالبہ ہے کہ سی پیک کے تحت مختص ہونے والے فنڈز کا کم از کم 5 فی صد بلوچستان کے لئے مختص کیا جائے،کے پی کا مطالبہ ہے کہ اے جی این قاضی فارمولے کے تحت پن بجلی پر خالص منافع انہیں دیا جائے اور غربت سے نمٹنے کے لئے خصوصی گرانٹ بھی دی جائے۔صوبوں کا یہ مطالبہ بھی ہے کہ انہیں این ایف سی کے تحت قابل تقسیم محصولات کا 80فی صد حصہ دیا جائے جبکہ مرکز صرف 20فی صد محصولات اپنے پاس رکھے،اس وقت صوبوں کو57.5فی صد جبکہ مرکز کو42.5فی صد حصہ مل رہا ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*