ایف 16 پر دوبارہ غور

ایف 16 پر دوبارہ غور

پاکستان نے امید ظاہر کی ہے کہ امریکہ کی نئی انتظامیہ میں جب دوبارہ سے ایف 16 لڑاکا طیاروں کے معاملے پر غور کیا جائے گا تو فیصلہ پاکستان کے حق میں جائے گا۔واشنگٹن میں پاکستان کے سفیر جلیل عباس جیلانی کا کہنا تھا کہ ٹرمپ انتظامیہ میں جس طرح کے لوگوں کی تقرری ہو رہی ہے اس سے انھیں کافی امیدیں ہیں۔انھیں یہ احساس ہوگا کہ القاعدہ جیسے جن دھڑوں کو ہم نے تباہ کر دیا ہے وہ دوبارہ سے فعال ہو سکتے ہیں۔یاد رہے کہ گذشتہ سال امریکی کانگریس کے دباؤ کے بعد اوباما انتظامیہ نے پاکستان کو ایف 16 طیاروں کی فروخت میں اقتصادی چھوٹ دینے سے انکار کر دیا تھا اور اس ڈیل کو روک دیا تھا۔پاکستانی سفیر جلیل عباس جیلانی واشنگٹن میں اپنی مدت مکمل کر کے اگلے ماہ پاکستان واپس جا رہے ہیں۔جلیل عباس جیلانی کا کہنا تھا کہ آنے والے دنوں میں پاکستان امریکہ کے ساتھ باہمی اعتماد میں بہتری کو سب سے زیادہ ترجیح دے گا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ کی پاکستان پالیسی میں کسی بڑی تبدیلی کے آثار فی الحال نظر نہیں آئے ہیں۔اسی ہفتے آنے والی ٹرمپ انتظامیہ میں امریکی وزیر دفاع کے عہدے کے لیے نامزد کیے گئے ریٹائرڈ جنرل جیمز میٹس نے کانگریس میں اپنی تقرری کی منظوری کے حوالے سے سوالوں کے تحریری جواب میں کہا تھا کہ پاکستان کو طالبان اور حقانی نیٹ ورک کے خلاف مزید اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*