مئی کے دوسرے ہفتے پارلیمنٹ میں بجٹ لانے کا فیصلہ

مئی کے دوسرے ہفتے پارلیمنٹ میں بجٹ لانے کا فیصلہ

حکومت نے آئندہ بجٹ 2018-19پارلیمنٹ میں مئی کے دوسرے ہفتے اور ممکنہ طور پر 12 مئی 2018 کو پیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس بات کا امکان ظاہر کیاجارہا ہے کہ ٹیکسیشن پر آئندہ فنانس بل 2018 کیلیے کوئی بڑی تبدیلی نہیں کی جارہی ۔

پاکستان مسلم لیگ (ن )کی قیادت میں 5 سالہ دور 3 جون 2018 کو ختم ہونے جارہا ہے اس لیے حکومت کا ارادہ ہے کہ قومی اسمبلی سے مئی 2018 کے اختتام تک بجٹ کی منظوری لے جیسا کہ سینیٹ سے اس پر حتمی سفارشات کیلیے 15 روز درکار ہوتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق سینیٹ سے سفارشات لینے کے بعد قومی اسمبلی فنانس بل 2018 اور بجٹ 2018-19پاس کیاجائے گا۔پاکستان مسلم لیگ (ن)کے اعلی ماہر معاشیات نے بدھ کو بتایا کہ ہمارا ارادہ ہے کہ اپنی حکومت کی 5 سالہ مدت پوری ہوتے ہوئے قومی اسمبلی سے مئی 2018 کے آخر تک اور ممکن ہے کہ 29 یا 30 مئی 2018 تک منظوری لے لیں ۔

مسلم لیگ (ن) حکومت کے بجٹ بنانے والوں نے آئندہ بجٹ 2018-19کو فائنل کرنے کیلئے مشاورت شروع کردی ہے اور ان کیلئے ایسے بجٹ کو پیش کرنے میں دہری مشکلات کاسامنا ہے کہ جسے دونوں کیئر ٹیکر سیٹ اپ کے ساتھ ساتھ آنےو الی حکومت کیلئے بھی قابل قبول ہو۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*